کشمیر سنٹر لاہور جموں وکشمیر لبریشن

کشمیر سنٹر لاہور
جموں وکشمیر لبریشن سیل
آزاد حکومت ریاست جمو ں وکشمیر
11۔اے،برڈوڈ روڈ،نزد ہوٹل رائل گارڈن،لنک لارنس روڈ لاہور
تاریخ05.08.2020
لاہور( ) بھارت کی جانب سے مقبوضہ کشمیر کی خصوصی حیثیت کو تبدیل کرنے کے لیے اپنے آئین کے آرٹیکل 370اور 35-Aکو ختم کیے ایک سال مکمل ہونے پر کشمیر سنٹر لاہور کے زیر اہتمام پریس کلب کے باہر بھارت کے اس غیر قانونی اور غیر اخلاقی اقدام کے خلاف بھرپور احتجاجی مظاہرہ کیا گیا۔ مظاہرے میں مختلف سیاسی وسماجی جماعتوں کے رہنماؤں نے شرکت فرمائی۔مظاہرے سے انچارج کشمیر سنٹر لاہور سردار ساجد محمود، رہنماکل جماعتی حریت کانفرنس لاہور شاخ انجینئر مشتاق محمود، جنرل سیکرٹری مسلم لیگ ن آزادکشمیر لاہور سرکل مرزا عامر جرال، امیر جماعت اسلامی آزادکشمیر لاہور ڈویژن خوشحال شاہین، رہنماآل کشمیر فورم سفیر احمد عباسی، صدر مسلم لیگ ن لاہور آزادکشمیر راجہ شہزاد، زرقا جاویدغلام عباس میراوراکرام بٹ نے خطاب کیا۔ سردار ساجد محمود نے کہا کہ ایک برس پہلے آج کے دن بھارت نے کشمیریوں کا استحصال کرتے ہوئے مقبوضہ کشمیر کی خصوصی آئینی حیثیت کو تبدیل کرتے ہوئے کشمیریوں کے حقوق پر شب خون مارا۔ ہم بھارت کے غیرآئینی اور غیر قانونی اقدامات کی مذمت کرتے ہیں اورمقبوضہ کشمیر کے بہنوں اوربھائیوں کو یہ باور کراتے ہیں کہ ہم تحریک آزادی میں ان کے شانہ بشانہ کھڑے ہیں اور حق خوداردیت کے حصول تک اپنی جدوجہد جاری رکھیں گے۔ انہوں نے کہا کہ مکمل لاک ڈاؤن کے باوجود مقبوضہ کشمیر میں گزشتہ ایک سال کے دوران مقبوضہ کشمیر میں خواتین سمیت 214لوگوں کو شہید کیا گیااور14سو سے زائد افراد کو شدید زخمی کیا گیا۔ 14ہزار سے زائد افرادکو گرفتارکیا گیا۔ انجینئرمشتاق محمود نے کہا کہ مقبوضہ کشمیر میں بھارتی مظالم بڑھتے جارہے ہیں۔لیکن کشمیریوں کا حق خوداردیت حاصل کرنے کا جذبہ بھی بڑھتا جارہا ہے۔راجہ شہزادنے کہا کہ کشمیریوں نے اپنی جانوں کا نذرانہ دے کر تحریک آزادی کی آبیاری کی ہے۔ تمام تر بھارتی ظلم وجبر اور سخت ترین پابندیوں اور لاک ڈاؤن کے باوجود یہ تحریک آج بھی جاری ہے اور منطقی انجام تک جاری رہے گی۔آخر میں انچارج کشمیر سنٹرسردار ساجد محمود نے قراردادیں پیش کی جنہیں اجتماع کے شرکا ء نے متفقہ طور پر منظورکیا۔

انعام الحسن: 0344-4106525

کشمیرسنٹر لاہور کے زیر اہتمام احتجاجی مظاہرے میں سردار ساجد محمود، انجینئر مشتاق محمود، عامر جرال، راجہ شہزاد،زرقا جاوید اورغلام عباس میرودیگر شریک۔

Related posts

Leave a Comment